لوک گلوکار اداکاراورفلمسازعنایت حسین بھٹی کی 92 ویں سالگرہ

0

لوک گلوکار، اداکاراور فلمسازعنایت حسین بھٹی کے مداح ان کی 92 ویں سالگرہ منارہے ہیں،،،ان کی سریلی آواز آج بھی کانوں میں رس گھولتی ہے،،،وہ بیک وقت گلوکار، اداکار، ہدایت کار، مصنف، سماجی رہنما، کالم نگاراور مذہبی سکالر تھے

معروف پلے بیک سنگر عنایت حسین بھٹی 12 جنوری 1928کو گجرات میں پیدا ہوئے۔سوہنی کے شہر گجرات سے اٹھنے والی دلکش آواز آج بھی اپنے مداحوں کے کانوں میں رس گھول رہی ہے۔ عنایت حسین بھٹی اپنی ذات میں ایک مثال تھے، وہ بیک وقت گلوکار، اداکار، ہدایت کار، مصنف، سماجی رہنما، کالم نگار اور مذہبی سکالر تھے۔

60 کی دہائی میں عنایت حسین بھٹی نے تھیٹر پر گلوکاری کا آغاز کیا، مرحوم نے سینکڑوں فلموں میں اپنی آوازکا جادو جگایا اوراداکاری کے بھی جوہر دکھائے۔ ان کی مشہور فلموں میں کرتارسنگھ، وارث شاہ، دنیا مطلب دی،عشق دیوانہ،شہری بابو،چن مکھناں،ظلم دا بدلہ،کوچوان اور سجن بیلی قابل ذکر ہیں۔

عنایت حسین بھٹی نے 1965 اور1971 کی جنگ میں لازوال ملی نغمے بھی گائے۔ جنہیں بے پناہ عوامی مقبولیت حاصل ہوئی ان کا گایا ہوا جنگی ترانہ”اے مرد مجاہد جاگ ذرا اب وقت شہادت ہے آیا” آج بھی پاک فوج کے فوجی بینڈ میں شامل ہے۔

عنایت حسین بھٹی کی آواز میں ریکارڈ ہونے والا پنجابی کا مشہور گیت چن میرے مکھناں بے حد مقبول ہوا۔ عنایت حسین بھٹی نے اردو، پنجابی، سندھی، سرائیکی اور بنگالی میں 2500 سے زائد گیت گائے۔ عنائت حسین بھٹی کی آواز اپنے جادوئی اثر کے ساتھ آج بھی زندہ ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: