سائرہ پیٹر نے برصغیر کے شعراء کی غزلیں گا کر محفل لوٹ لی

0

پاکستانی نژاد برطانوی سنگر سائرہ پیٹر کو یہ کمال حاصل ہے کہ وہ گائیکی کی تمام اصناف میں عمدہ گاتی ہیں۔لندن میں ان کی آواز کا جادو سرچڑھ کر بول رہا ہے۔ گزشتہ روز سائرہ پیٹر نے لندن میں مقبول شعراء کی غزلیں گا کر محفل میں رنگ جما دیا۔تفصیلات کے مطابق
برطانیہ میں مقیم معروف شاعر اور صحافی ایوب اولیاء کی خدمات کو ٹریبوٹ دینے کے لیے ایک شام منائی گئی جس میں ادب اور دیگر شعبوں کی شخصیات نے شرکت کی۔ اس موقع پر اوپرا سنگر سائرہ پیٹر نے ایوب اولیاء کا کلام اور ٹھمری اپنے منفرد انداز میں پیش کر کے حاضرین کو محظوظ کیا۔ ان پرفارمنس کے دوران پنڈال تالیوں کی گونج سے گونجتا رہا۔ سائرہ پیٹر نے شاہ عبدالطیف بھٹائی اور بابا بلھے شاہ کے صوفیانہ کلام کے علاوہ اپنی کمپوز کردہ صوفی غلام مصطفی تبسم کی ایک فارسی غزل پیش کر کے محفل لوٹ لی۔ حاضرین کی مسلسل فرمائش پر سائرہ نے مشہور غزل۔ بات کرنی مجھے مشکل کبھی ایسی تو نہ تھی اور اطالوی اوپرا بھی پیش کیا۔ سائرہ پیٹر کا کہنا تھا کہ
برطانیہ میں اردو ادب پر بہت کام ہو رہا ہے کوئی بھی گائیک اردو ادب سے محبت کرتاہے تو اس کے فن میں نکھار پیدا ہوجاتا یے۔میں نے بچپن سے بر صغیر کی کلاسیکی شاعری کا مطالعہ شوق سے کرتی رہی ہوں۔اردو غزل میں ایک طاقت ہے۔جو سماعتوں کے ذریعے دل میں اتر جاتی ہے۔اس تقریب کی میزبانی تھرڈ ورلڈ سولیڈیرٹی لندن کے چیئرمین مشتاق لاشاری نے کی۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: