لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد کرونا کی دوسری لہر کا خدشہ

0

لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد متعدد ممالک میں کرونا کی دوسری لہر کا خدشہ،،،جنوبی کوریا،جرمنی میں مزید کیسز رپورٹ،سیئول کے نائٹ کلب دوبارہ بند کردیئے گئے

جنوبی کوریا میں لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد دارالحکومت سیئول میں 2 ہزار سے زائد نئے کرونا کیسز رپورٹ ہوئے جس پر حکومت نے شہر کے تمام نائٹ کلب، ہوسٹس بار اور ڈسکو بار دوبارہ سے بند کردیئے ۔

ادھر جرمنی میں گزشتہ 24 گھنٹے میں 600 سے زائد کیسز سامنے آئے جبکہ ایک مذبح خانے میں 180 افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی ہے۔ جرمن وزیر خارجہ ہیکو ماس کا کہنا ہے کہ یورپ کو یہ تسلیم کرنا ہوگا کہ وہ وبا کا مقابلہ کرنے کے لیے ’بہتر طور پر تیار نہیں تھا‘۔

اٹلی میں اطالوی حکام پریشان ہیں کہ لوگ لاک ڈاؤن میں نرمی کےبعد سماجی فاصلہ قائم رکھنےسےگریزاں ہیں اورتقریبات میں شریک ہورہے ہیں،میلان کےمیئر جیوسپی سالا نےخبردارکیا کہ چند سر پھرے لوگ شہر کی معاشی سرگرمیوں کو خطرے میں ڈال رہے ہیں۔

معاشی سرگرمیوں کے لیے لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد امریکا میں کرونا وائرس کی دوسری لہر کا خطرہ بڑھ گیا اور اس مسئلے سے نمٹنے کیلئے ٹرمپ انتظامیہ نے سر جوڑ لئے جبکہ مشرق وسطیٰ کے ملک کویت میں آج سے 30 مئی تک لاک ڈاؤن کا آغاز ہوگیا ۔

سپین میں کرونا وائرس کی دوسری لہر کو سنبھالنے کے لیے انتظامات کا جائزہ لیا گیا تاہم سپین کے کچھ علاقوں میں زیادہ تر دیہی علاقوں میں بارز اور ریسٹورنٹ کو 50 فیصد حصہ کھولنے کی اجازت ہے اس کے ساتھ ساتھ چرچ، تھیٹر اور میوزیم بھی محدود حاضری کے ساتھ دوبارہ کھولے جاسکتے ہیں۔

دوسری جانب بیلاروس میں کرونا وائرس کے ہزاروں کیسز منظر عام پر آنے کے باوجود لاک ڈاؤن نہیں کیا گیا اور ہزاروں کی تعداد میں لوگ 1945 میں نازی جرمنی کی شکست کی سالگرہ کے موقع پر جشن منانے کے لیے گھروں سے نکل آئے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: