شریف فیملی کی سزا معطلی کی درخواستوں پرہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج

ہائیکورٹ کو ریفرنس کے مجرموں کی سزا معطل کرنے کی درخواستوں پر سماعت کا کوئی جواز نہیں ،نیب کا موقف

اسلام آبادنیب نے سابق وزیر اعظم نواز شریف، مریم نواز، کیپٹن (ر) محمدصفدر کی سزا معطل کرنے کی درخواستوں پر سماعت رکوانے کیلئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی ہے۔ نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے نواز شریف، مریم اور کیپٹن (ر) صفدر کی ایون فیلڈ ریفرنس میں سزاؤں کی معطلی کی درخواست کی سماعت پر قرار دیا تھا کہ مفروضے پر دی گئی سزا برقرار نہیں رہ سکتی۔ چیئرمین نیب نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں دائر درخواستوں کی سماعت رکوانے کیلئے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا ہے۔درخواست میں مؤقف پیش کیا گیا کہ ایون فیلڈ ریفرنس کے مجرمان کی سزا معطل کرنے کی درخواستوں پر سماعت کرنے کا کوئی جواز نہیں اور مجرموں کی اپیلوں پر سماعت کے بجائے حکم امتناع کی درخواست پر کارروائی کا بھی کوئی جواز نہیں، ہائیکورٹ نے سزا معطل کرنے کی درخواستوں پر پہلے سماعت کا فیصلہ دیکر اختیار سے تجاویز کیا۔درخواست میں استدعا کرتے ہوئے کہا گیا کہ اگر مجرموں کے وکیل اپیلوں پر دلائل دینے سے قاصر ہیں تو مجرم نئے وکیل کی خدمات حاصل کر لیں اور عدالتِ عظمیٰ ہائیکورٹ کا سزا معطل کرنے کی درخواستوں پر پہلے سماعت کرنے کا 10 ستمبر کو فیصلہ کالعدم قرار دے اور ہائیکورٹ کو ایون فیلڈ فیصلے کیخلاف اپیلوں پر سماعت کا حکم دیا جائے۔

You might also like

Comments are closed.