رافیل طیاروں کے معاہدے میں بھارتی کمپنی کو نوازنے کا الزام

طیارہ ڈیل میں ہمارا کوئی کردار نہیں،فرانسیسی حکومت کی وضاحت

رافیل جیٹ طیاروں کے اربوں مالیت کے معاہدے میں بھارتی کمپنی کو نوازنے کا الزام ،،،، سابق فرائسیسی صدر فرانسوا اولاند کے بیان پرنئی بحث چھڑگئی
رافیل فائٹر طیاروں کی بھارت کے ساتھ ڈیل کے معاملے پرسابق فرنچ صدر فرانسوا اولاند کے بیان کے بعد فرانسیسی حکومت بھی میدان میں آگئی اور اس کا کہنا ہے کہ اس ڈیل میں کمپنی کےانتخاب میں ہمارا کوئی کردار نہیں اور فرانسیسی کمپنیوں کو کنٹریکٹ کے لئے بھارت کی کسی بھی فرم کو منتخب کرنے کی آزادی تھی۔فرانسیسی حکومت نے کہا ہے کہ 36 رافیل طیاروں کی فراہمی کے لئے بھارت کے ساتھ کئے گئے بین الاقوامی معاہدے سے طیارے کی فراہمی اور معیار کو یقینی بنانے کے سلسلہ میں پوری طرح سے ذمہ داریوں کے بارے میں تشویش ہے۔ فرانس کے ایک پبلشر نے مبینہ طور پر سابق فرانسیسی صدر فرانسوا اولاند کے حوالے سے سنسنی خیز انکشاف کرتے ہوئے کہا تھاکہ اربوں ڈالر کے اس سودے میں بھارتی حکومت نے نجی کمپنی کو ڈسالٹ ایوی ایشن کا پارٹنر بنانے کی تجویز دی تھی۔ادھرکانگریس پارٹی کے صدر راہول گاندھی نے بھارتی وزیراعظم کو آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ مودی نے بھارت کو دھوکہ دیا اور انہوں نے ایک دیوالیہ کمپنی کو طیارہ معاہدے میں شریک کیا ۔ان کا کہا تھا کہ مودی ملک کے ” چوکیدار” نہیں بلکہ اصل میں وہ کیا ہیں ، اس بات کا عوام کو بھی پتا لگ چکا ہے ۔

You might also like

Comments are closed.