منشا بم کو سپریم کورٹ سے گرفتار کر لیا گیا

منشا بم کو سپریم کورٹ سے گرفتار کر لیا گیا

منشاءبم ضمانت کے حصول کیلئے سپریم کورٹ میں پیش ہوا تو چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار ایک میٹنگ میں مصروف تھے تاہم جب وہ میٹنگ سے فارغ ہوئے تو انہیں منشاءبم کے پیش ہونے کا بتایا گیا۔

واضح رہے کہ منشا بم اور اس کے بیٹوں پر لاہور کے علاقے جوہر ٹاؤن میں زمینوں پر غیرقانونی قبضے کا الزام ہے اور اس حوالے سے سپریم کورٹ میں ایک عام شہری کی جانب سے درخواست بھی دائر کی گئی تھی جس کی سماعت کے دوران پولیس نے عدالت عظمیٰ کو آگاہ کیا تھا کہ منشابم کے خلاف 70 مقدمات درج ہیں چیف جسٹس پاکستان نے منشا بم کی گرفتاری کے احکامات جاری کئے تھے جس کے بعد 14 اکتوبر کو پولیس نے منشا بم کے بیٹے فیصل منشا کو ناکے پر روکنے کی کوشش کی تھی، لیکن وہ فرار ہوگیا۔منشا بم گرفتاری دینے آج اچانک سپریم کورٹ پہنچ گیا تھا جہاں اس نے چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار سے ملاقات کرانے کا مطالبہ کیا تھا۔

منشا بم نے موقف اختیار کیا کہ میں نے کسی کی زمینوں پر قبضہ نہیں کیا، میرے پاس ساری زمین میرے والد کی ہے، میرے بیٹے نے پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر چیئرمین کا الیکشن لڑا، جس کے بعد سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے مجھ پر جھوٹے مقدمات بنائے۔ منشا بم کا کہنا تھا کہ میرے ساتھ زیادتی ہو رہی ہے، مجھے انصاف دیا جائے، میں پولیس سے چھپ کر عدالت آیا ہوں، چاہتا ہوں کہ چیف جسٹس سے ملوں اور سب بتاکر گرفتاری دوں تاکہ انتقامی کارروائی نہ ہوسکے۔

You might also like

Comments are closed.