ننھی زینب کے قاتل عمران ارشد کی آخری وصیت منظر عام پر آ گئی

ننھی زینب کے قاتل عمران ارشد کی آخری وصیت منظر عام پر آ گئی

ننھی زینب کے قاتل عمران ارشد کی آخری وصیت منظر عام پر آ گئی ہے، جس کے مطابق قاتل عمران نے خاندان کو آخری سلام بھیجا اور ان سے معافی مانگی۔
وصیت میں عمران علی نے کہا کہ میرے جانے کے بعد میرے گھر والوں کو تنگ نہ کیا جائے اوراس کے گھرانے کو اپنے ذاتی گھر میں رہنے دیا جائے کیوںکہ میرے اس عمل میں گھر والوں کا کوئی قصور نہیں۔
قاتل عمران کا کہنا تھا کہ میں اپنے کئے پر نادم ہوں اگر زندگی وفا کرتی تو االلہ سے معافی مانگتا، مجھ سے عبرت حاصل کی جائے اور کوئی بھی میری طرح کا جرم نہ کرے۔

یاد رہے معصوم زینب کے سفاک قاتل عمران کو کوٹ لکھپت سینٹرل جیل میں مجسٹریٹ عادل سرور اور زینب کے والد محمد امین کی موجودگی میں صبح ساڑھے پانچ بجے تختہ دار پر لٹکایا گیا تھا۔
پھانسی سے پہلے عمران کا طبی معائنہ کیا گیا تھا اور ورثا سے آخری ملاقات کرائی گئی، پھانسی کے بعدمیڈیکل آفیسرکی رپورٹ کے ساتھ لاش ورثا کے حوالے کردی گئی تھی۔
زینب کی والدہ کا کہنا ہے زینب کا قاتل دنیا کی عدالت سے نکل کر خدا کی عدالت میں پہنچ گیا۔
خیال رہے مجرم عمران پر زینب سمیت 8 بچیوں سے زیادتی کا الزام تھا جس پر اسے مجموعی طور پر اکیس مرتبہ سزائے موت سنائی گئی تھی۔

You might also like

Comments are closed.