آزاد کشمیر ہی نہیں بلکہ مقبوضہ کشمیر بھی ہمارا ہے۔فیا ض الحسن چوہان

آزاد کشمیر ہی نہیں بلکہ مقبوضہ کشمیر بھی ہمارا ہے۔فیا ض الحسن چوہان

4لاکھ ملکیت کا آرٹسٹ ہیلتھ انشورنس کارڈ متعارف کروارہے ہیں،ہر سال 10ہزار فنکار مستفید ہونگے، فنون لطیفہ سے وابستہ ہر شعبہ کے افراد کو ہیلتھ انشورنس کارڈ کی سہولت فراہم کی جائے گی،200فنکاروں کے لئے پروگرامز منعقد کئے جائیں گے جن میں پرفارم کرنے پر ان کو ایک ایک لاکھ روپے دیا جائے گا۔ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر برائے اطلاعات و ثقافت فیاض الحسن چوہان نے فنون لطیفہ کے شعبے سے تعلق رکھنے والی نامور شخصیات سے ملاقات کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا۔اجلاس میں چیئرمین الحمراءتوقیر ناصر،نامور ڈائریکٹر پرویزکلیم،اداکار خالد عباس ڈار ،فلم ڈائریکٹر سید نور،گلوکار حامد علی خان،گلوکار انور رفیع،اداکاراورنگزیب لغاری،مصور غلام مصطفی،راحت نوید مسعود،گلوکارہ حمیرا ارشد کے علاوہ دیگر اہم شخصیات اور ڈائریکٹر آرٹ اینڈ کلچرذوالفقار علی زلفی نے شرکت کی۔صوبائی وزیر اطلاعات و ثقافت فیا ض الحسن چوہان نے ادب و ثقافت کے شعبے میں خدمات سرانجام دینے والے لیجنڈ کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہمارے ملک کے سفیر ہوتے ہیں جو ملکی ترقی اور نیک نامی کے لئے کام کرتے ہیں،ہم ان کو مشکل وقت میں بے یار و مددگار نہیں چھوڑیںگے، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی قیادت میں بھرپور اقدام اٹھائے ہیں اور آئند بھی ٹھوس نتائج کے حامل اقدامات کئے جارہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میںبہت کچھ بہتری کی طرف گامزن ہوتانظر آئے گا،الحمراءمیں سپاہی مقبول حسین کی زندگی سے ماخوذ ڈرامہ پیش کیا گیا جس کو بڑے پیمانے پر سراہا گیا ہے، اب ہم جہیز کی لعنت پر آگہی دینے کے لئے ڈرامہ بنانے جارہے ہیں۔انھوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ شاید آفریدی ہمارا ہیرو ہے کشمیر پورے پاکستان کا ہے،اس موقع پر چیئرمین الحمراءتوقیر ناصر نے ادب و ثقافت کے فروغ کے لئے اٹھائے جانے والے اعلیٰ اقدامات پر بھرپور طریقے سے کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔انھوں نے کہا کہ الحمراءآرٹس کونسل ادب و ثقافت کے جامع پروگرام کو آگے بڑھانے کے لئے تمام تر وسائل برﺅکار لا رہی ہے۔کلچرل جرنلسٹس فاونڈیشن آف پاکستان کے وفد نے بھی صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان سے ملاقات کی.

جس میں انہیں کلچر کے حوالے سے تجاویز دیں .صحافی وفد میں طاہر بخاری, ٹھاکر لاہوری, قیصر افتخار, حسن عباس زیدی, وقار اشرف, ظہیر شیخ اور شجر الدین شامل تھے.صوبائی وزیر نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انفارمیشن کے شعبے میں انقلابی کام کئے گئے ہیں،آرٹسٹ سپورٹ فنڈ کو بہتری کی جانب لے کر آئے ہیں، میری خواہش تھی کہ فنکاروں کیلئے ایسا کام کر جائیں جس کو سب یاد رکھیں، صوبائی وزیرفیا ض الحسن چوہان نے کہا کہ دس ہزار فنکاروں کو ہیلتھ انشورنس کارڈ جاری کئے جائیں گے، پنجاب بھر سے فنکارکسی بھی ہسپتال سے علاج کر اسکے گا۔ فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ الحمراء میں مافیا کی اجارہ داری تھی، جس کو کنٹرول کرنے کیلئے کمیٹی بنا دی گئی ہے، جو فنکار ایک دفعہ ڈرامہ کی تاریخ حاصل کرے گا اس کو دوبارہ تاریخ نہیں ملے گی، آل شریف نے جو کرپشن کا بازار کیا اس کو بند کرینگے، فنکاروں کی گیارہ سو لوگوں پر مبنی فہرست ختم کردی گئی ہے۔اور ماہانہ وظیفہ بند کر دیاگیا ہے، فنکاروں کو اب بھیک نہیں بلکہ کام دینگے، فنکاروں کی سپورٹ کیلئے شوز کئے جائینگے، شادی بیاہ کی تقریبات کا دورانیہ 10 بجے سے بڑھانے کی تجویز پر جلد فیصلہ سامنے آئے گا۔اس بارے میں وزیر اعلیٰ پنجاب سے بات ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ جہیز کی لعنت پر خصوصی ڈرامہ پیش کرینگے، سپاہی مقبول حسین پر ڈرامے کو بہت پزیرائی ملی ہے ۔ تھیٹر کی جانب سے فیملیز کو لانے کیلئے صاف ستھرے ڈرامہ پیش کرینگے،ایک سوال کے جواب میں صوبائی وزیر نے کہا شاہد آفریدی ہمارا ہیرو ہے اس کا کشمیر سے متعلق بیان انڈین میڈیا نے توڑمروڑ کر پیش کیا ہے۔میں کہتا ہوں کہ آزاد کشمیر ہی نہیں بلکہ مقبوضہ کشمیر بھی ہمارا ہے۔

You might also like

Comments are closed.