پنجاب فلم سنسر بورڈ توڑ دیا گیا

پنجاب فلم سنسر بورڈ توڑ دیا گیا

صوبائی وزیر برائے اطلاعات و ثقافت فیاض الحسن چوہان نے ہنگامی طور پر پنجاب فلم سنسر بورڈ توڑ دیا۔ اس موقع پر صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ پنجاب فلم سنسر بورڈ توڑنے کا فیصلہ وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلی عثمان بزدار کی سادگی مہم اور سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں کیا گیا ہے، شہباز شریف نے 12 لاکھ روپے پر پنجاب فلم سنسر بورڈ کا چیئرمین تعینات کیا تھا، سنسر بورڈ کے چند ممبر ایسے تھے جو خود فلمساز، ڈائریکٹر اور اداکار تھے، جن کا بورڈ میں ہونا درست نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری پالیسی کے تحت نےنیا چیئرمین ڈیڑہ لاکھ اور وائس چئیرمین ایک لاکھ تنخواہ وصول کرے گا، جبکہ سنسر بورڈ کے ممبران کا اعزازیہ 5 ہزار سے بڑھا کر 8 ہزار کردیا جائے گا،

انہوں نے بتایا کہ وزیر اعلی پنجاب کو سمری بھجوا کر نیا سنسر بورڈ ایک ماہ کے اندر تشکیل دیدیا جائے گا۔ صوبایی وزیر اطلاعات و ثقافت نے نئے پنجاب فلم سنسر بورڈ میں نئے لوگوں کو شامل کیا جائے گا. سپریم کورٹ کی رولنگ کے خلاف سابق وزیر اعلی پنجاب نے چیئرمین فلم سنسر بورڈ کو لاکھوں روپے معاوضہ دیا. انہوں نے کہا کہ فلمیں بنانے والے کیسے فلمیں سنسر کر سکتے ہیں بورڈ میں تبدیلی لائیں گے

You might also like

Comments are closed.