ہیلتھ انشورنس کارڈ کا دائرہ صوبے کے تمام چھتیس اضلاع تک بڑھا دیا گیا ہے- فیاض الحسن چوہان

ہیلتھ انشورنس کارڈ کا دائرہ صوبے کے تمام چھتیس اضلاع تک بڑھا دیا گیا ہے- فیاض الحسن چوہان

صوبائی وزیر اطلاعات و ثقافت فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ پنجاب میں اب اورنج ٹرین اور میٹرو بسوں سے بالاتر ہو کر صحت اور تعلیم پر توجہ دینی ہو گی۔ اس مقصد کے لیے حکومت پنجاب نے ہیلتھ انشورنش کارڈ کا دائرہ تمام چھتیس اضلاع تک بڑھا دیا ہے۔ جس کی حد تین لاکھ سے بڑھا کر تیں لاکھ ساٹھ ہزار کر دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکس کی خالی سیٹوں پر جلد سے جلد بھرتیاں بھی کی جا رہی ہیں۔
ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر نے آج یہاں پاکستان سوسائٹی آف فیملی فزیشنز کے زیر اہتمام منعقدہ کانفرنس کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے گزشتہ دور حکومت میں صحت جیسے اہم ترین شعبے کو ایسے وزیر کے حوالے کیا گیا جو صحت کے بجائے زمینوں کا زیادہ خیال رکھتا تھا۔ نام نہاد خادم اعلی کی قیادت میں صوبے میں صحت کو بہتر کرنے کے بجائے اورنج ٹرین اور میٹرو بسوں پر توجہ دی گئی۔ صحت اور تعلیم کا بجٹ نکال کر میٹرو بس اور اورنج ٹرین پر لگا دیا گیا۔ دس سالوں میں ینگ ڈاکٹرز کے مسائل تک حل نہیں ہو سکے۔ سابق وزیر اعلی پنجاب مائیک گرا کر ہٹلر اور ماؤزے تنگ بننے کی کوشش کرتے تھے۔ ان کے نزدیک انسان کے بجائے سیمنٹ اور سریے کی عزت ہوتی تھی۔ ان کی پوری توجہ لانگ شوز پہن کر اور ٹوپی پہن کر فوٹو سیشن کروانے پر ہوتی تھی۔ در حقیقت پنجاب میں نہ کسی کے پاس صحت کے شعبے کو چلانے کی نہ صلاحیت تھی نہ ان کی اتنی ذہنیت تھی۔ اس کے برعکس پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے کے پی کے میں عمران خان کی قیادت میں صحت کے شعبے میں ایسی انقلابی اصلاحات کی ہیں جو عوام کے سامنے ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر اسی طرز پر اب پنجاب میں بھی وزیر اعلی سردار عثمان بزدار اور ڈاکٹر یاسمین راشد کی قیادت میں صحت کے شعبے میں اصلاحات کی جا رہی ہیں۔ بیشتر سفارشات تو صوبائی کابینہ کے اجلاس میں منظور کر لی گئی ہیں۔

اس موقع پر صوبائی وزیر اطلاعات و ثقافت نے پاکستان کونسل آف فیملی فزیشنز کی صحت کے لیے کئے گئے خدمات کو سراہا اور ان کو یقین دلایا کہ حکومت پنجاب ڈاکٹروں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کا عزم رکھتی ہے۔ اس ضمن میں مستقبل میں بھی پاکستان کونسل آف فیملی فزیشنز کے عہدیداران سے مشاورت ہوتی رہے گی۔ میری کوشش ہو گی کہ صوبائی وزیر صحت کے ساتھ اپنی موجودگی میں کونسل کے عہدیداران کی ملاقات کرواؤں تاکہ ان کے مسائل اور مطالبات کو حل کیا جا سکے۔

You might also like

Comments are closed.