کراچی میں پولیس مقابلے کے دوران میڈہکل طالبہ نمرہ ہلاک

کراچی میں مسیحا انسانیت ہی بھول گئے

انڈا موڑ مبینہ پولیس مقابلے کے دوران ہلاک نمرہ کا معاملہ تنازع بن گیا جناح اسپتال کی لیڈی ایم ایل او کا پوسٹ مارٹم کرنے سے انکار ایم ایل رپورٹ عباسی شہید اسپتال میں ہوئی، وہیں پوسٹ مارٹم کراو، لیڈی ایم ایل او کی ہٹ دھرمی قائم

پولیس حکام کا کہنا ہے نمرہ کی موت جناح اسپتال پہنچنے کے بعد ہوئی اور نمرہ کا ڈیتھ سرٹیفیکٹ بھی جناح اسپتال سے جاری ہوا، لیڈی ایم ایل او کا پوسٹ مارٹم سے انکار سمجھ سے بالاتر ہے، مقتولہ نمرہ کی لاش کئی گھنٹے سے مردہ خانے میں پوسٹ مارٹم کی منتظر تھی

جبکہ مقتولہ نمرہ کے ماموں ذکی احمد کی جناح اسپتال کے مردہ خانے پر میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا .
"جو صورتحال لگ رہی ہے اسے سے یہی معلوم ہوتا ہے کہ نمرہ پولیس کی گولی کا نشانہ بنی اس واقعے کی غیر جانبدارانہ تحقیقات چاہتے ہیں کئی گھنٹے سے یہاں رل رہے ہیں پوسٹ مارٹم نہیں کیا جارہا انڈا موڑ پرفائرنگ کی اطلاع ٹی وی کے ذریعے ملی جونہی نمرہ نام معلوم ہوا ہم نے فوری رابطہ کیا کئی گھنٹے سے قانونی کارروائی کے لئے انتظار کی سولی پر لٹکے ہیں تمام ارباب اقتدار اس بے حسی کا نوٹس لیں "

You might also like

Comments are closed.