الحمراء کلچرل کمپلیکس میں ڈرامہ پیسہ بولتاہے جاری

ڈرامہ انسانی جذبات کے اظہار کاعکاس ہے۔ای ڈی اطہر علی خان

لاہورآرٹس کونسل کے ذیلی ادارہ الحمراء کلچرل کمپلیکس میں اصلا حی،کامیڈی و فیملی کھیل ”پیسہ بولتاہے“ پیش کیا گیا،جسے پروفیسر صدیق احمد نے تحریر کیا ہے جبکہ اس کے ہدایتکار قیصر جاوید ہیں۔ایگزیکٹوڈائریکٹر لاہورآرٹس کونسل اطہر علی خان نے ڈرامہ ”پیسہ بولتاہے“ کے حوالے سے اپنے تاثرات میں کہا کہ الحمراء کی سرگرمیاں معاشرتی ضرورت کے مطابق ترتیب دی جارہی ہیں،اس ڈرامہ کے ذریعے نوجوان نسل کورشتوں کا تقدس نبھانے کادرس دیا گیا ہے،پیسہ انسانی وجود کا معیار نہیں،اصل معاشرتی حسن سنہری اقدار میں پنہاں ہے،پیار،محبت،خلوص اورخون کے رشتے ہی اصل رشتے ہیں جنہیں بے لوث ہو کر نبھانے کی ضرورت ہے،انھوں نے کہا کہ ڈرامہ ”پیسہ بولتا ہے“ کہانی اور اداکاری میں اپنی مثال آپ ہے، نوجوان اداکار اپنی صلاحتیں منوار ہے ہیں،انھوں نے مزید کہا کہ رشتوں کے بے حسی کو کامیڈی کے ذریعے نہایت خوبصورت انداز میں پیش کرکے الحمراء اکیڈمی آف پرفارمنگ آرٹ کے نوجوان اداکاروں نے دل موہ لئے ہیں۔ڈرامہ میں الحمراء اکیڈمی آف پرفارمنگ آرٹ کے اداکاروں وسیم اختر، جبران حسین،امان اللہ ناصر، سادی خان،محمد عمر،رومان،نعمان آصف،صائمہ وسیم، حفضہ طاہر اور مہک شہزادی نے اپنے فن کا بھرپور مظاہر ہ کیا۔ڈپٹی ڈائریکٹر کلچرل کمپلیکس نوید الحسن بخاری نے اس موقع پر کہاکہ اس ڈرامہ کا مقصد عوام کے سامنے رشتوں کی بے حسی کو پیش کرنا تھا تاکہ ہم اپنے رویوں میں مثبت تبدیلیاں لاسکیں،یہ ڈرامہ بے حد سبق آموز ہے اس کے کرداروں نے اپنے مکالموں کے ذریعے عوام کو اپنے فکر وعمل کو درست کرنے کی اپیل کی ہے جو نہایت موثر ثابت ہو گی۔ڈرامہ”پیسہ بولتا ہے“8اپریل2019ء تک ہر شام 6:30بجے بلاتعطل پیش کیا جائے گا۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.