احمد فراز کا 89 واں یوم پیدائش

0

اردو زبان اورغزل کو آفاقی شہرت بخشنے والے شاعراحمد فراز کا آج 89 واں یومِ پیدائش منایا جا رہا ہے،،،رومانوی شاعری ان کی شناخت بنی مگرمعاشرے کی ناانصافیوں کیخلاف وہ ہردورمیں صدائے احتجاج بلند کرتے رہے

لاکھوں دلوں پراپنی شاعری کے ذريعے حکمرانی کرنے والے احمد فراز 12 جنوری 1931 کو کوہاٹ ميں پيدا ہوئے۔ احمد فراز کا اصل نام سید احمد شاہ تھا۔ ان کی شاعری میں غم جاناں بھی ہے اور غم دوراں بھی موجود ہے۔ ان کی عمومی شناخت رومانوی شاعری کے حوالے سے ہے لیکن وہ معاشرے کی ناانصافیوں کیخلاف ہردورمیں صدائے احتجاج بلند کرتے رہے جس کی پاداش میں انہیں مختلف پابندیاں جھیلنی پڑیں اورجلاوطنی بھی اختیار کرنی پڑی۔
آج ہم دار پہ کھینچے گئے جن باتوں پر
کیا عجب کل وہ زمانےکو نصابوں میں ملیں

احمد فراز اردو، فارسی اور انگریزی ادب میں ماسٹرز کی ڈگری کے حامل تھے اورانہوں نے ریڈیو پاکستان سے اپنی عملی زندگی کا آغاز کیا۔ خوابوں کو سربازار بیچنے والے احمد فراز کو مقبولیت بھی خوب ملی۔ ماؤں نے ان کے نام پر اپنے بچوں کے نام رکھے تو نامور گلوکاروں نے بھی ان کا کلام شوق سے گایا۔

احمد فراز ریڈیو پاکستان، لوک ورثہ، اکادمی ادبیات اور نیشنل بک فاؤنڈیشن سے بھی وابستہ رہے۔ انہیں ”ستارہ امتیاز”، ”ہلال امتیاز” اور بعد از مرگ ” ہلال پاکستان” سے نوازا گیا۔ زخموں کی نمائش نہ کرنے والا شاعر 25 اگست 2008 کو انتقال کرگیا۔
شکوہ ظلمت شب سے تو کہیں بہتر تھا
اپنے حصے کی کوئی شمع جلاتے جاتے

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: