کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے پاکستان کے اقدامات

0

کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے اقدامات،حکومت نے چمن میں پاک افغان سر حد کل سے بند کرنے کا فیصلہ کر لیا،پاک ایران بارڈر بھی بدستور بند ہے۔اسلام آباد ائیر پورٹ پر جدید تھرمل سکینر نصب کر دیا گیا

وفاقی حکومت نے افغانستان میں کرونا وائرس کی موجودگی کے باعث پاک افغان سرحد پر چمن بارڈر ایک ہفتے کیلئے بند کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔وزارت داخلہ کے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق 2 مارچ سے چمن میں واقع پاک افغان بارڈر ایک ہفتے کیلئے مکمل طور پر بند رہے گا،ہر قسم کی آمدورفت اور تجارتی سرگرمیاں معطل رہیں گی۔ وزرات داخلہ نے ایف سی حکام کو مطلع کیا ہے کہ وہ کل سے بارڈر بند رکھنے کے حوالے سے انتظامات کرلیں۔

پاکستان میں کرونا وائرس کے مزید دو کیسز سامنے آ گئے جس کے بعد مریضوں کی تعداد چار ہو گئی ہے۔دونوں مریضوں نے حال ہی میں ایران کا سفر کیا گیا تھا۔ایک مریض کا تعلق کراچی سے ہے جسے سول ہسپتال کے آئسولیشن وارڈ میں شفٹ کیا گیا ہے۔اسلام آباد کے پمز ہسپتال کے آئسولیشن وارڈ میں موجود مریضہ کا تعلق گلگت بلتستان سے ہے۔

دوسری جانب پاک ایران بارڈر بھی بدستور بند ہے ایران سے آئے مزید3سو پاکستانی قرنطینہ سینٹر میں داخل کر لیا گیا، طبی حکام کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس سے بچنے کا حل صفائی اور احتیاط ہے

ادھر اسلام آباد ائیر پورٹ پر کرونا وائرس سے نمٹنے کیلئے سول ایوی ا یشن انتظا میہ مزید متحرک ہو گئی،جدید تھرمل سکینر نصب کر دیا گیا، ایئر پورٹ پر روزانہ کی بنیاد پر مسافروں کا ڈیٹا اور دیگر کوائف اکٹھا کرنے کا بھی فیصلہ کر لیا گیا

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: