مسلمان کو بھی کرونا زدہ افراد کی لاشیں دفنانے سے روک دیا گیا

0

جزیرہ نما جنوبی ایشیائی ملک سری لنکا کی حکومت نے کرونا وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی لاشوں کو جلانا لازم قرار دے دیا اور اس حوالے سے خصوصی ہدایات جاری کی ہیں جس میں کہا گیا ہے کہ وبائی مرض سے مرنے والے کی لاش کو دفن نہیں کیا جائے گا بلکہ اسے صرف جلایا جائے گا۔

دنیا کے تمام ممالک میں کرونا کی وجہ سے مرنے والے افراد کو ان کے مذہبی طریقہ کار کے تحت دفنایا اور جلایا جا رہا ہے، البتہ اس ضمن میں خصوصی اقدامات کیے گئے ہیں اور حد سے زیادہ احتیاط کی جا رہی ہے تاکہ اگر لاش میں ابتدائی کچھ گھنٹوں تک وائرس موجود ہو تو اس سے کوئی دوسرا متاثر نہ ہو۔

تاہم سری لنکا کی حکومت نے تمام مذاہب کے پیروکاروں کے لیے ایک ہی طریقہ وضح کرتے ہوئے کرونا سے ہلاک ہونے والے ہر شخص کی لاش کو جلانا لازمی قرار دےدیا ۔ سری لنکا کی حکومت کے متنازعہ فیصلے پر وہاں کی سب سے اہم اور بڑی اقلیت مسلمانوں کو اعتراض تھا اور انہوں نے حکومتی فیصلے کے خلاف احتجاج کیا لیکن حکومت اپنا فیصلہ واپس لینے پر نہ مانی

مسلمانوں کے مطابق ان کے پیاروں کی لاشوں کو جلانا ان کے مذہبی بنیادی حقوق کے خلاف ہے، اسی طرح سری لنکن حکومت کے متنازع فیصلے پر وہاں کام کرنے والی انسانی حقوق کی تنظیموں نے بھی اسے غیر انسانی فیصلہ قرار دیا ہے۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: